03 - ایک آیت ایک حدیث

إِنَّمَا الْمُؤْمِنُونَ الَّذِينَ إِذَا ذُكِرَ اللّهُ وَجِلَتْ قُلُوبُهُمْ وَإِذَا تُلِيَتْ عَلَيْهِمْ آيَاتُهُ زَادَتْهُمْ إِيمَانًا وَعَلَى رَبِّهِمْ يَتَوَكَّلُونَ

ترجمہ:-
اللہ تعالی کا ارشاد ہے: ایمان والے تو وہی ہیں کہ جب اللہ تعالی کا نام لیا جاتا ہے تو ان کے دل ڈر جاتے ہیں اور جب اللہ تعالی کی آیتیں ان کو پڑھ کر سنائی جاتی ہیں تو وہ آیتیں ان کے ایمان کو قوی تر کردیتی ہیں اور وہ اپنے رب ہی پر توکل کرتے ہیں'
(انفال-آیت2)

حدیث
حضرت ابوذر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ و سلّم نے فرمایا: "تم میں سے ہر شخص کے ذمے اس کے جسم کے ایک ایک جوڑ کی سلامتی کے شکرانے میں روزانہ صبح کو ایک صدقہ ہوتا ہے۔ ہر سبحان اللہ کہنا صدقہ ہے۔ ہر بار الحمدللہ کہنا صدقہ ہے، ہر بار لا الہ الّا اللہ کہنا صدقہ ہے، ہر بار اللہ اکبر کہنا صدقہ ہے، بھلائی کا حکم کرنا صدقہ ہے، برائی سے روکنا صدقہ ہے۔ اور ہر جوڑ کے شکر کی ادائیگی کے لئے چاشت کے وقت دو رکعتیں پڑھنا کافی ہوجاتی ہیں" (مسلم شریف)