006 - نظم۔۔۔ انوکھا ملن وش

میں ستارہ ہوں
مجھے تو ٹوٹنا ہی ہے
خوشبو تجھے بھی تو
ہوا میں بکھرنا ہی ہے
آوٴ کیوں نا
ٹوٹنے اور بکھرنے سے پہلے
میں اس رات کو روشن کر جاوٴں
اور تم اس گُلشن کو مہکاوٴ
آوٴ دونوں فنا ہونے سے پہلے
ایسے ہی مل جائیں